Artificial Intelligence Episode 1


آرٹیفیشل انٹیلیجنس (پہلا حصہ )
___________________________
تحقیق و تحریر :حسن خلیل چیمہ
________________________________________________
تعارف :
ہم انسان ہمیشہ سے اپنے خیالات کو حقیقت میں بدلتے آئے ہیں یعنی کہ جس چیز کے بارے میں ہم نے سوچا بعد میں اسے حقیقت میں بدل دیا چاہے بات ہوا میں اڑتے جہازوں کی ہو وائرلیس انٹرنیٹ کی ہو یا پھر کمپیوٹرز کی ہو ایک وقت تھا کہ یہ چیزیں صرف ہماری فینٹسیز یعنی کہانیوں میں تھیں ۔اس وقت کسی نے سوچا بھی نہیں ہوگا کہ ہم ان فینٹسیز کو صرف کچھ ہی دہائیوں میں حقیقت میں بدلنے میں کامیاب ہوجائیں گے لیکن ایسا ہوا اور ایسا آج تک ہو رہا ہے ایسی ہی ایک ٹیکنالوجی ہے آرٹیفیشل انٹیلیجنس یعنی "مشینی ذہانت "۔جس کے بارے میں آج سے کچھ سالوں پہلے صرف سوچا جا سکتا تھا اور ہر گزرتے دن کے ساتھ یہ پہلے سے زیادہ بہتر بھی ہو رہا ہے ۔
ایسے میں سوال یہ اٹھتا ہے کہ کیا ہوگا جب مشینی ذہانت اپنے عروج پر ہوگی ؟
ہالی ووڈ فلموں میں دکھائے جانے والے جدید روبوٹس کی طرح کیا یہ انسانیت کے خاتمے کی وجہ بنیں گی؟
یا پھر انسانوں کی مدد کرے گے کائنات کے رازوں پر سے پردہ اٹھانے میں ؟
آج کی اس تحریر میں ہم جاننے کی کوشش کریں گے آرٹیفیشل انٹیلیجنس کے بارے میں اور تلاش کریں گے ان سوالات کے جوابات ۔۔۔۔!!تو چلیں شروع کرتے ہیں آج کی اپنی یہ دلچسپ تحریر 😉
نوٹ :- (تحریر کو آگے بڑھانے سے پہلے میں یہاں ایک بات کرنا چاہوں گا کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے متعلق یہ میری دوسری تحریر ہے ۔جب کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس تحریری سلسلے کا یہ پہلا حصہ ہے اس سلسلے کا دوسرا حصہ نیورا لنک #Neuralink کے نام سے میں پہلے سے ہی لکھ چکا ہوں اس لئے مزید سمجھنے کے لئے وہ حصہ بھی ضرور پڑھیں ) شکریہ
________________________________________
آرٹیفیشل انٹیلیجنس اصل میں ہے کیا ؟
آرٹیفئشل انٹیلیجنس سے متعلق بات کرنے سے پہلے یہ جاننا ضروری ہے کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس اصل میں ہے کیا ۔دراصل آرٹیفیشل انٹیلیجنس سائنس کا وہ فیلڈ ہے جس میں مشینوں کے ہارڈ ویئر سے زیادہ سافٹ ویئر کمپوننٹس کو انٹیلیجنٹ بنانے پر کام کیا جاتا ہے تاکہ وہ انسانوں کی غیر موجودگی میں بھی اپنے کام کو اچھے سے انجام دے سکیں ۔
سب سے پہلے کچھ الگوریدھمز بنائے جاتے ہیں جن کی بنیاد پر یہ کام کرنا شروع کرتے ہیں لیکن گزرتے وقت کے ساتھ جیسے جیسے ان کے پاس ڈیٹا جمع ہوتا جاتا ہے یہ ڈیٹا کے مختلف پیٹرنز کی بنیاد پر یہ مستقبل میں ڈیٹا پرڈیکشن یعنی(ڈیسژن میکنگ ) فیصلہ کرنے کا کام کرتے ہیں کیوں کہ ہم آرٹیفیشل انٹیلیجنس کے بالکل شروعاتی حصے میں ہیں اس لیے اسے مشین لرننگ( machine learning) کہنا زیادہ بہتر ہوگا ۔جو کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس کی ہی ایک برانچ ہے جس میں مشینوں کو لرن(Learn )کرنا سکھایا جاتا ہے ۔
اگر آپ کو یہ لگ رہا ہے کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا استعمال سپیس پروگرامز یا پھر کسی انتہائی اہم کام میں کیا جاتا ہے تو آپ پوری طرح سے غلط ہے ۔آپ کو پتہ بھی نہیں کہ آپ چاروں طرف سے آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے گھرے ہوئے ہیں چاہے بات کریں گوگل سرچ کی ،کمپیوٹر گیمز کی یا پھر آپ کے موبائل میں موجود مختلف گوگل ایپلیکیشنز کی ۔
آپ کو کیا لگتا ہے ان کے پیچھے بیٹھے لوگ ان کو چلاتے کرتے ہوں گے ؟
جی نہیں ! یہ سب آرٹیفیشل انٹیلیجنس کی مدد سے ہی چلائے جاتے ہیں ۔
اور تو اور یوٹیوب اور فیس بک پر آپ کی دلچسپی کے مطابق جو رکمنڈیشنز آپ کے سامنے آتے ہیں وہ بھی آرٹیفیشل انٹیلیجنس کے ذریعے ہی کنٹرول کیے جاتے ہیں
ایمازون Amazon جیسے ویب سائٹس آپ کو ان چیزوں سے متعلق ای میل یا میسجز پہلے سے ہی بھیجنے لگتے ہیں جو آپ مستقبل میں خریدنے والے ہوتے ہیں ۔
یہ تو تھی آرٹیفیشل انٹیلیجنس کی کچھ عام مثالیں اگر بات کرو بڑے فیلڈز کی تو ڈرونز ،خودکار کاریں ، سپیس میشنز اور سینٹیفک ایکسپیریمنٹ میں بھی آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا استعمال کیا جاتا ہے ۔اور تو اور اب میڈیکل فیلڈ میں بھی بیماریوں کا پتہ لگانے اور اور کئی بیماریوں کا علاج کرنے کے لئے بھی آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا استعمال کیا جاتا ہے کہنے کا مطلب یہ ہے کہ آج تقریبا ہر فیلڈ میں آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا استعمال کیا جانے لگا ہے اور اب بھی ہمارے لیے مددگار بھی ثابت ہو رہے ہیں لیکن کیا ہمیشہ ایسا ہی ہوگا ؟
____________________
خطرات:
ابھی آرٹیفیشل انٹیلیجنس اپنے شروعاتی مراحل میں ہے جس کی وجہ سے یہ ہم انسانوں کی طرح ذہین نہیں ہیں
اس لئے ابھی ہمیں ان سے کوئی خطرہ نہیں ہے ۔لیکن جس رفتار سے ترقی کر رہے ہیں وہ دن دور نہیں جب یہ ہم انسانوں کی طرح ذہین ہو جائیں گے یا پھر یہ بھی ممکن ہے کہ یہ ہم سے بھی کہیں زیادہ ذہین ہو جائیں کیا اس وقت بھی یہ ہمارے لیے مدد گار ثابت ہوں گے یا پھر ہماری تباہی کا ذریعہ بنیں گے ؟
اس سے متعلق مختلف لوگوں کی مختلف رائے ہے
ایلون مسک ،سٹیفن ہاکنگ اور بل گیٹس جیسے لوگوں کی مانیں تو یہ انسانوں کی ایجاد ہوں گے کیونکہ اس کے بعد کوئی نئی ایجاد کرنے کے لئے انسان اس زمین پر بچیں گے ہی نہیں
آئیے دیکھئے ان لوگوں نےآرٹیفیشل انٹیلیجنس کے بارے میں کیا کہا ہے ۔
1-Elon Musk " artificial intelligence is like summoing a devil how shouldn't be called unless you control it"
2- Stephen Hawking" any further advancement to artificial intelligence could be a fatal mistake. Artificial intelligence has the power to redesign itself and take of as it's own whereas humans have slow biological evolution enhance they wouldn't be able to compete."
3- Bill Gates-" AI devices will be fine initially but as they start learning more and more from us ,about us they will get more powerful and intelligent then the humankind"
آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے ہمیں کیا خطرہ ہوسکتا ہے اس کا چھوٹا سا نمونہ ہمیں پچھلے سال اس وقت دیکھنے کو ملا جب فیس بک ایک آرٹیفیشل انٹیلیجنس کے ذریعے آپریٹ کیے جانے والے چیٹ باکس بنانے پر کام کر رہا تھا اس کا کام تھا لوگوں سے چیٹ کرنا اس لیے الگوریتھم میں یہ صاف حکم دیا گیا تھا چیٹ کرنے کے دوران انہیں صرف انگریزی زبان کا استعمال ہی کرنا تھا جب چیٹ باکس پوری طرح سے تیار ہوگئے تو اس بات کو ٹیسٹ کرنے کے لئے کہ یہ کیسا رسپانس کر رہے ہیں تو فیس بک ڈویلپرز نے دو ایک طرح کے چیٹ باٹس کو آپس میں بات کرنے پر لگا دیا لیکن جب انھوں نے ان دونوں کے درمیان ہو رہی بات چیت کو دیکھا تو ان کی آنکھیں پھٹی کی پھٹی رہ گئی کیونکہ وہ دونوں چیٹ باٹس آپس میں بات کرنے کے لئے ایک الگ ہی زبان کا استعمال کر رہے تھے جو دیکھنے میں انگلش جیسا ضرور تھا لیکن ہمارے لیے اسے سمجھ پانا ناممکن تھا حیرانی کی بات یہ ہے کہ بے شک ہم ان کی استعمال کی جا رہی ہیں زبان کو نہیں سمجھ رہے تھے لیکن وہ دونوں اس زبان کو سمجھ رہے تھے اس بات کا پتہ اس وقت چلا جب یہ بات چیت کامیابی سے ختم ہوئی اگر آپ دیکھنا چاہتے ہیں کہ وہ بات چیت کیسی تھی تو اس کا سکرین شاٹ میں نیچے کمنٹ باکس میں لگا دوں گا ۔
دراصل چیٹ کو اور ایفیشنٹ بنانے کے لیے ان چیٹ باٹس نے ایک الگ اپٹیمم لینگویج کا استعمال شروع کر دیا تھا کیونکہ ان کے درمیان ہوئی بات چیت کو فیس بک ڈویلپرز نہیں سمجھ پا رہے تھے اس لیے یہ خطرناک بھی ثابت ہوسکتا تھا اس لیے اس پروگرام کو اس وقت فوراً بند کردیا گیا ۔
ابھی تک ہم نے جتنے بھی آرٹیفیشل انٹیلیجنٹس کیا ایجاد کی ہے وہ ویک یعنی کمزور اے-آئی کے اندر آتے ہیں کیونکہ یہ ہمارے طے کردہ احکامات کے اندر ہی کام کرتے ہیں اور وہ بھی صرف محدود ایریاز میں لیکن سائنسدانوں کے مانے تو آنے والے پچاس سالوں کے اندر ہم ایسےآرٹیفیشل انٹیلیجنس رپورٹ بنانے لگیں گے جو اپنے کوڈز میں تبدیلی کرنے کے بھی قابل ہوں گے اس ایونٹ کو "سنگولیرٹی" کہا جائے گا ۔اور ایسے آرٹیفیشل انٹیلیجنس کو جنرل آرٹیفیشل انٹیلیجنس کا نام دیا جائے گا ۔
برحال اس مرحلے کے آنے پر انسانوں کے ساتھ کیا ہوگا اس پر دو الگ الگ رائے ہیں پہلا آرٹیفیشل انٹیلیجنس انسانوں کا خاتمہ کر دیں گے جبکہ دوسرا ایڈیشنل انٹیلیجنس انسانوں کی مدد کریں گے اس کائنات کے رازوں پر سے پردہ اٹھانے میں ۔جس کے بعد انسان ہمیشہ زندہ رہے گا
چلیں سب سے پہلے بات کرتے ہیں پہلی پیشن گوئی کے بارے میں ۔
ایک بار اگر مشین ہماری طرح ذہین ہو گئی تو ان کی ذہانت ہماری طرح لینیئرلی نہیں بلکہ ایکسپونشیلی یعنی جلدی سے بڑھے گی کہنے کا مطلب یہ ہے کہ جتنا ہم ہزار سال میں سیکھیں گے مشینیں اتنا صرف کچھ ہی دنوں میں سیکھ لیں گی اس تیز رفتار ترقی کی وجہ سے ہم انسان ہیں کبھی جھنگ میں بھی شکست نہیں دے پائیں گے ۔
کیونکہ انہیں ہرانے کے لیے ہم جو بھی پلان بنائیں گے اسے ایڈوانس میں پرڈیکٹ کرکے وہ اس کے لئے پہلے سے ہی تیار ہوں گے کہنے کا مطلب یہ ہے کہ وہ ہمارے رویوں سے ہمارے مستقبل کا پتہ چلا لیں گے ۔
تاریخ گواہ ہے کہ آج تک اس زمین پر جس پر جاندار نے جنم لیا ہے اس نے خود کو بچانے اور اپنی نسل کو آگے بڑھانے کے لئے ہر ممکن کوشش کی ہے اس لئے ایسی کوئی وجہ نہیں ہے کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے لیس مشین ایسا نہیں کریں گی اپنی تعداد کو بڑھانے کے لئے ان کو ان کو ضرورت ہو کہ زمین پر موجود خام مال کی ۔کیونکہ زمین پر صرف انسان ہی ہوں گے وہ ان کے علاوہ خام مال کا استعمال کر رہے ہوں گے ایسے میں وہ انسانوں کو اپنا دشمن ماننے لگیں گے اور ممکن ہے کہ وہ انسانوں کو ختم کرنے کی بھی کوشش کریں تاکہ وہ بنا کسی روک ٹوک کے اپنی تعداد کو بڑھا سکیں۔
کیونکہ وہ انتہا کے ذہین ہوں گے اس لیے ایسا کرنے کے لئے انہیں انسانوں کے خلاف کسی قسم کی جنگ چھیڑنے کی ضرورت نہیں پڑے گی بلکہ وہ یہ کام کسی بیالوجیکل ہتھیار یا نینو ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے بھی کر سکتے ہیں ان سے ڈرنے کی ضرورت ہمیں اس لیے بھی ہے کیونکہ زمین کی تاریخ بتاتی ہے کہ اس پر جو سپیشیز سب سے زیادہ طاقتور ہوتی ہے وہ دوسروں پر راج کرنے کی کوشش کرتی ہے ۔
مثال کے طور پر انسانوں کی ہی مثال لے لیجئے جو کہ اس زمین پر سب سے عقلمند جاندار ہے اپنے چاروں طرف دیکھیے ہم نے اپنے سے کم عقل جانداروں کے ساتھ کیا کیا ہے ہم اپنی من مرضی کے مطابق ان کے ساتھ جیسا چاہیں رویہ رکھتے ہیں جب چاہا انہیں غلام بنا لیا جب چاہا انھیں مار ڈالا ۔کہنے کا مطلب یہ ہے کہ ہم کسی سے اس وقت تک ڈرتے ہیں جب تک ہمیں پتا ہو کے وہ ہم سے زیادہ طاقتور اور ذہین ہے ۔جب آپ کو یہ پتہ چلتا ہے کہ آپ سے زیادہ کوئی طاقتور اور ذہین نہیں ہے تو آپ کا ڈر بھی ختم ہو جاتا ہے ۔آرٹیفیشل انٹیلیجنٹس جب ہم سے زیادہ ذہین ہو جائیں گے تو ان کے پاس بھی انسانوں سے ڈرنے کی کوئی وجہ نہیں رہے گی تو ان کے لیے بھی ہم ان چیونٹیوں کی طرح ہوجائیں گے جنہیں ہم جب چاہیں مسل دیتے ہیں ۔
چلیں ایک بار یہ مان لیتے ہیں کہ ایسا کچھ نہیں ہوگا اس کے باوجود بھی ہمیں انتہائی ذہین رپورٹ سے بےحد خطرہ ہو گا کیونکہ ہم نہیں جانتے کہ وہ اپنے کام کو کیسے سرانجام دیں گے ۔
مثال کے طور پر ہم ایک آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے لیس ربوٹ بناتے ہیں دنیا سے بھوک افلاس مٹانے کے لیے یعنی کہ ان کا مشن ہوگا دنیا سے ہر حال میں بھوک افلاس کو مٹانا اب ایسا دو طریقوں سے کیا جا سکتا ہے پہلا کوئی ایسی تکنیک ڈولپ کی جائے جس کی مدد سے فصلوں کو ہزار گنا زیادہ پیداوار دینے کے لیے بڑھایا جا سکیں جس سے ان لوگوں کو بھی کھانا ملے جو آج بھوکا سوتے ہیں اور دوسرا طریقہ یہ کہ انسانوں کو مٹا دیا جائے نہ رہیں گے انسان اور نہ رہے گی بھوک ۔کیونکہ زیادہ تر انٹیلیجنس ربوٹس آسان طریقے کا ہی انتخاب کرتے ہیں کیونکہ ان میں انسانیت نہیں ہوتی بلکہ ان کے لیے ان کا مشن ضروری ہوتا ہے اس سے انہیں کوئی فرق نہیں پڑے گا کہ اسے کیسے انجام دیا جا رہا ہے یا پھر اسے انجام دینے کو دوران کتنے لوگوں کی جان جا رہی ہے
اس طرح اگر ہم کار بنانے کے لیے ایک ربوٹ تیار کریں تو اس کا مشن ہوگا زیادہ سے زیادہ کاریں بنانا کیوں کہ وہ اپنے سافٹ ویئر کے کوڈز کو بدلنے کے قابل ہوں گے تو اس کو اپ گریڈ کرتے جائیں گے تاکہ وہ اپنے مشن کو اور اچھے سے انجام دے سکیں ایسے میں کیا ہوگا اگر وہاں کار بنانے کے لیے مٹیریل ختم ہو جائے کیونکہ ان کا مشن کاریں بنانا ہے اس لیے اپنے سافٹ ویئر کو اپ گریڈ کرتے جائیں گے جس سے وہ باہر سے ہم مال لا سکے اور ان کے مشن میں کسی بھی قسم کی دقت نہ آئے اگر انسان کے کوڈز کو بدلنے کی کوشش کریں گے تو وہ ایسا نہیں کرنے دیں گے کیونکہ وہ اسے اپنے مشن میں رکاوٹ کے روپ میں دیکھیں گے زیادہ سے زیادہ خام مال لانے کے چکر میں یہ زمین کے مائنگ ایریا پر قبضہ جمانے کی کوشش کریں گے جب وہاں سے بھی خام مال ختم ہو جائے گا تو یہ انسانوں کے استعمال کی چیزیں جیسے کار وغیرہ کو بھی رکاوٹ کی شکل میں دیکھیں گے اس لیے وہ انسانوں کو بھی ختم کرنے کی کوشش کریں گے تاکہ ان کا مشن جاری رہے اس کے بعد کیا پتا جب زمین پر خام مال ختم ہو جائے تو یہ خام مال کی تلاش میں دوسرے سیاروں پر چلے جائیں
___________ _______
فوائد :--
اب تک ہم نے جانا کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنٹس ہمارے لئے کتنے خطرناک ہو سکتے ہیں جبکہ فیس بک کے بانی سمیت کئی اور لوگوں کا ماننا ہے کہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس ہماری ضرورت ہے بنا ان کے نہ ہی عام کائنات کے رازوں پر سے پردہ اٹھا سکتے ہیں اور نہ ہی ہم وہ حاصل کر سکتے ہیں جو ہم حاصل کرنا چاہتے ہیں کیونکہ ہمارے تمام میں موجود نیوران ،سٹوریج اور سپیڈ ایک حد ہوتی ہے اس لیے وہ کرنے میں ہم کو ہزاروں سال لگ جائیں گے جو ہم آرٹیفیشل انٹیلیجنس سے صرف کچھ سالوں میں کر لیں گے
برحال چلئے جانتے ہیں کہ یہ ہمارے لئے کس طرح فائدہ مند ثابت ہو سکتے ہیں کیا ہوا اگر سنگولیرٹی کے بعد اے- آئی ہماری مدد کرے بجائے ہمیں ختم کرنے کے ۔اگر ایسا ہوا تو انسانوں کی پوری زندگی ہی بدل جائے گی اپنے چاروں طرف دیکھیے ہم انسانوں نے کام ذہانت کے باوجود کیا کچھ حاصل کرلیا ہے وہ بھی بہت تھوڑے وقت میں جب آرٹیفیشل انٹیلیجنس اپنی ذہانت کی بنیاد پر ہم سے آگے بڑھ جائیں گے تو ان کے لیے کائنات کے رازں پر سے پردہ اٹھانا کوئی بڑی بات نہیں ہوگی وقت گزرنے کے ساتھ ان کی ذہانت بڑھتی جائے گی اور ایک وقت آئے گا کہ وہ اس کائنات بلکہ زندگی سے متعلق سب کچھ جان لیں گے اس مرحلے پر وہ ہمارے لئے تین طریقوں سے مددگار ثابت ہوں گے
پہلا یہ ایک استاد کی طرح ہمارے ان سب سوالوں کے جواب نہیں دیں گے جو ہم ان سے پوچھیں گے جیسا کہ ہم ٹائم مشین کیسے بنا سکتے ہیں اس زمین پر زندگی کی شروعات کیسے ہوئی ۔یعنی کہ اس وقت شاید بھی کچھ ایسے سوال بچیں گے جن کا جواب یہ نہ دے سکےگے
دوسرا ایک حکم ماننے والے ملازم کی طرح ہیں ہمارا ہر حکم مانیں گے کیونکہ یہ سوپر انٹیلیجنٹ ہوں گے اس لیے ان کے لیے کچھ بھی کرنا ممکن ہوگا
مثال کے طور پر اگر ہم یہ کہیں گے کہ ہمیں ایک ٹائم مشین بنا دوں تو یہ کسی جدید سائنس کا استعمال کرکے ایسا کرنے پر قادر ہو گے یعنی اس وقت انسانوں کو خود سے کچھ نہیں کرنا پڑے گا کیونکہ ان کا کام کرنے کے لیے آرٹیفیشل انٹیلیجنس موجود ہوں گے
تیسرا ہمارا سب سے بڑا ہمدرد ۔کیا ہوگا اگر سنگولیرٹی کے بعد آرٹیفیشل انٹیلیجنس ہمارا نوکر بننے کی بجائے ہمارے ہمدرد بن جائیں اور خود سے ہی ہماری مدد کرنے لگ جائیں
کیونکہ وہ سوپر انٹیلیجنٹ ہوں گے اس لیے ان کے لیے ایٹم ری اسمبل اور ڈس اسمبل کرنا ممکن ہوگا اس سے وہ بیماریوں کو صرف کچھ ہی دنوں میں ختم کرنے پر قادر ہو گے اور نئی نسل کے جانور پیدا کرنے میں بھی ۔
ان کے لئے ایک ایٹم کو دوسرے ایٹم میں بدلنا بھی کوئی مشکل کام نہیں ہوگا جس کی مدد سے وہ ایک مادے کو دوسرے میں تبدیل کرنے پر بھی قادر ہوں گے۔
ساتھ ہی ساتھ یہ بھی ممکن ہے کہ اس وقت ٹیلی پورٹیشن جیسا ٹرانسپورٹیشن موڈ بھی حقیقت بن جائے
ایسا بھی ہو سکتا ہے کہ نینو ٹیکنالوجی کی مدد سے یہ ہمارے سیلز کو ریپئر کرکے واپس ہمیں بوڑھا ہونے سے بچا سکیں گے ۔
ممکن ہے کہ ان کی مدد سے انسان اپنے دماغ کو ہمیشہ زندہ رکھے اور خود بھی ان کے جیسا ایک ربوٹ بن جائے
اس سے آگے کیا ہو سکتاہے یہ تو مستقبل میں ہی پتہ چلے گا
برحال آرٹیفیشل انٹیلیجنس ہمارے لئے صحیح ہوگیا غلط یہ تو وقت ہی بتائے گا لیکن آپ کو کیا لگتا ہے اپنی رائے کا اظہار کمنٹ باکس میں کر کے میری رہنمائی فرمائیں

0/Post a Comment/Comments

Previous Post Next Post