US Army and UFO's


US Army and UFO's

Unrecognizable flying objects that
(Unidentified Flying Objects UFO's) 
  It is also said that there is a phenomenon in which some strange objects are seen flying. They can range in shape from round light circles to metal cubes. There is definitely a feature in all of them. Their flying style, speed, and left-to-right approach are unmatched by any other human technology. That is why they are called unrecognizable flying objects. There is no doubt that ufo exists. The question is what are ufo?

Evidence and videos of them have been received not only from the general public but also from the US military's trained pilots who have reported numerous incidents of seeing and encountering them.
For example, between 2014 and 2015, the US Navy Theodore Roosevelt encountered UFOs. When American pilots flew out of the navy, their radar, infrared cameras and other devices would confirm the presence of these strange flying objects. Such incidents continued for many months. Six American pilots are witnesses, two of whom recorded statements during a documentary. According to an American pilot of Lieutenant rank, these flying objects did not have wings like a plane, nor did they have a tail like an airplane and there was no engine, etc. but their aerial feats were impossibly amazing.
Visit it for details,
https://www.livescience.com/65585-ufo-sightings-us-pilots.html

In addition, there were numerous reports from U.S. pilots that prompted the Pentagon to take UFO or unrecognizable flying objects seriously, and the Pentagon developed an undercover program whose job was to obtain UFO reports from pilots. And the secret program was to analyze and research radar data
Advanced Aerospace Threat Identification Program (AATIP)
Was named. A large amount of money was allocated for this program. All investigations into the program were secret and the public was not informed. Then in 2012, the news came that this program was terminated. Then in 2017, another news came out that the secret investigation on this program and UFO has not ended but is still going on. The Pentagon also released two audio-visual videos of American pilots recording conversations of pilots looking at UFOs during a flight. In the conversation, the pilots were heard saying that the UFOs in front of us are so fast that they can travel thousands of miles in a single moment.
Seth Shostak, a senior astronomer at Search for Extraterrestrial Intelligence (SETI), says the release of the recordings of the American pilots is a good move that will give the public a chance to know the facts about aliens and unidentified flying objects.
More details from this link,
https://www.livescience.com/65387-navy-ufo-sightings.html

According to the intelligence director of the Pentagon's secret program (AATIP), the UFOs he observed and researched were possible of speed and technology. Depending on the speed at which these UFOs were seen to go left, right, change direction or gain speed, these flying objects would have to withstand a g-force of 400-500, which is the most maneuverable aircraft in American aircraft. The g-force can withstand only 18g and a person can withstand a maximum of 9g grout force even for a short time. According to the US intelligence officer, this technology or phenomenon is beyond their comprehension.
More from this link,
https://www.livescience.com/65596-ufo-pentagon-history-channel.html

In addition, NASA research scientist Kevin Knuth says that ufo is based on facts and the time has come for us to seriously research them. Scientists are often not interested in these subjects because they fear that they will be ridiculed and their reputation will be tarnished. This ridiculous attitude is against the scientific method and human curiosity and we have to expand our thinking beyond a narrow view. There may be many things in this world and universe that we may not even imagine!
More details from this link,
https://cosmosmagazine.com/space/why-we-should-take-ufo-sightings-seriously

In a secret briefing to three US government senators recently, Pentagon officials briefed them on all the investigations, facts, and information about UFO so far.
Description From this link,
https://www.politico.com/story/2019/06/19/warner-classified-briefing-ufos-1544273

Visit the links below for more information.
https://www.washingtonpost.com/world/national-security/navy-no-release-of-ufo-information-to-the-general-public-expected/2019/05/01/25ef6426-6b82-11e9- 9d56-1c0cf2c7ac04_story.html? Noredirect = on

https://www.washingtonpost.com/national-security/2019/04/24/how-angry-pilots-got-navy-stop-dismissing-ufo-sightings/?tid=a_inl_manual&noredirect=on

https://www.nytimes.com/2017/12/16/us/politics/pentagon-program-ufo-harry-reid.html

-----------------------------------------------


ناقابلِ شناخت اڑتی ہوئی چیزیں جنہیں
(Unidentified Flying Objects UFO's) 
  بھی کہا جاتا ہے ایک ایسا مظہر ہے جس میں کچھ عجیب ہیئت کی چیزیں اڑتی ہوئی نظر آتی ہیں۔ ان کی شکل گول روشنی کے دائروں سے لے کر دھات کے بنے کیوب جیسی ہو سکتیں ہیں۔ ان سب میں ایک خاصیت ضرور موجود ہوتی ہے۔ ان کے اڑنے کا انداز، تیز رفتاری اور دائیں بائیں مڑنے کا طریقہ کسی بھی انسانی ٹیکنالوجی سے مماثلت نہیں رکھتا۔ لہذا ان کو ناقابلِ شناخت اڑتی چیزوں کا نام دیا گیا ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ ufo موجود ہیں سوال یہ ہے کہ ufo کیا ہیں؟

ان کو دیکھنے کی شہادتیں اور ویڈیوز نہ صرف عام لوگوں سے موصول ہوتی ہیں بلکہ امریکی فوج کے ٹرینڈ پائلٹس تک ان کو دیکھنے اور ان سے آمنا سامنا ہونے کے متعدد واقعات کو رپورٹ کر چکے ہیں۔
مثال کے طور پہ 2014 سے 2015 کے دوران امریکی بحری بیڑے Theodore Roosevelt کو ان ufo  سے سامنا کرنا پڑا۔ اس بحری بیڑے سے جب امریکی پائلٹس پرواز کے لئے نکلتے تو ان کے ریڈار، انفراریڈ کیمرہ اور دیگر آلات ان عجیب غریب اڑتی ہوئی چیزوں کی موجودگی کو کنفرم کرتے۔ ایسے واقعات کئ مہینے تک چلتے رہے۔ 6 امریکی پائلٹس ان کے گواہ ہیں جن میں سے دو پائلٹس نے ایک ڈاکیومنٹری کے دوران اپنے بیانات بھی ریکارڈ کرائے۔ ایک لیفٹیننٹ رینک کے امریکی پائلٹ کے مطابق ان اڑتی ہوئی چیزوں کے نہ جہاز جیسے پر تھے، نہ جہاز جیسی دم تھی اور کوئی انجن وغیرہ تھا لیکن ان کے ہوائی کرتب ناممکن حد تک حیران کن تھے۔
تفصیل کے لئے اس کو وزٹ کریں،
https://www.livescience.com/65585-ufo-sightings-us-pilots.html

اس کے علاؤہ بہت سی رپورٹس امریکی پائلٹس کی طرف سے موصول ہوئیں جس کی بنا پہ پینٹاگون کو ufo یا ناقابلِ شناخت اڑتی چیزوں کو سنجیدگی سے لینا پڑا اور پینٹاگون نے ایک خفیہ پروگرام تشکیل دیا جس کا کام پائلٹس کی جانب سے موصول ہونے والی ufo ریپورٹس اور ریڈار ڈیٹا کا تجزیہ کرنا اور ان پہ تحقیق کرنا تھا اس خفیہ پروگرام کو
Advanced Aerospace Threat Identification Program (AATIP)
کا نام دیا گیا۔ اس پروگرام کے لئے ایک بڑی رقم مختص کی گئی۔ اس پروگرام کی تمام تحقیقات خفیہ تھیں اور عوام کو ان سے آگاہ نہیں کیا گیا۔ پھر 2012 میں خبر سامنے آئی کہ اس پروگرام کو ختم کر دیا۔ اس کے بعد 2017 میں پھر ایک خبر سامنے آئی کہ یہ پروگرام اور ufo پہ خفیہ تحقیقات ختم نہیں ہوئیں بلکہ ابھی تک چل رہیں ہیں۔ اس کے ساتھ پینٹاگون نے امریکی پائلٹس کی دو ویڈیوز بمہ اڈیو پبلک کیں جن میں دوران پرواز پائلٹس کے ufo کو دیکھنے کے بارے گفتگو کی ریکارڈنگ تھی۔ اس گفتگو میں پائلٹس یہ کہتے ہوئے سنے گئے کہ ہمارے سامنے جو ufo ہیں ان کی رفتار اتنی تیز ہے کہ ایک لمحے میں ہزاروں میل کا سفر طے کر سکتی ہیں۔
امریکی پائلٹس کی ریکارڈنگ کو پبلک کرنے پہ Search for Extraterrestrial Intelligence (SETI) کے سینیئر فلکیات دان Seth Shostak کا کہنا ہے کہ ایک اچھا قدم ہے اس سے عوام کو ایلینز اور ناقابل شناخت اڑتی چیزوں بارے حقائق جاننے کا موقع ملے گا۔
مزید تفصیل اس لنک سے،
https://www.livescience.com/65387-navy-ufo-sightings.html

پینٹاگان کے خفیہ پروگرام (AATIP) کے انٹیلیجنس ڈائریکٹر کے مطابق جن ufo کا مشاہدہ اور تحقیق انہوں نے کی وہ نا ممکن حد تک سپیڈ اور ٹیکنالوجی کی حامل تھیں۔ جس تیزی کے ساتھ یہ ufo دائیں بائیں جاتیں، راستہ تبدیل کرتیں یا سپیڈ پکڑتی دیکھی گئیں اس حساب سے ان اڑتی چیزوں کو 400-500 تک g-force یعنی گریوٹیشنل فورس کو برداشت کرنا پڑتا ہوگا جبکہ امریکی جہازوں میں سب سے زیادہ manoeuvrable جہاز کی g-force برداشت کرنے کی صلاحیت صرف 18g تک ہے اور انسان زیادہ سے زیادہ 9g تک گروٹیشنل فورس برداشت کر سکتا ہے وہ بھی ایک مختصر وقت تک۔ امریکی انٹیلیجنس آفیسر کے مطابق یہ ٹیکنالوجی یا مظہر ان کی سمجھ سے باہر ہے۔
مزید اس لنک سے،
https://www.livescience.com/65596-ufo-pentagon-history-channel.html

اس کے علاؤہ ناسا کے ریسرچ سائنسدان Kevin Knuth کا کہنا ہے کہ ufo حقائق پہ مبنی چیزیں ہیں اور وقت ا گیا ہے ہمیں ان پہ سنجیدگی سے ریسرچ کرنی چاہیے۔ اکثر اوقات سائنسدان ان موضوعات میں دلچسپی نہیں لیتے کیونکہ ان کو ڈر ہوتا ہے کہ ان کا مذاق اڑایا جائے گا اور ان کی reputation خراب ہو جائے گی۔ یہ تمسخرانہ رویہ سائنسی طریقہ کار اور انسانی تجسس کے خلاف ہے اور ہمیں ایک تنگ نظر سوچ سے ہٹ کر اپنی سوچ وسیع کرنی پڑے گی۔ اس دنیا اور کائنات بہت سی ایسی چیزیں موجود ہو سکتی ہیں جن کا شاید ہمیں وہم گمان بھی نہ ہو!
مزید تفصیل اس لنک سے،
https://cosmosmagazine.com/space/why-we-should-take-ufo-sightings-seriously

حال ہی میں امریکی گورنمنٹ کے تین سینیٹرز کو ایک خفیہ بریفننگ میں پینٹاگان کے نمائندوں نے ufo کے بارے اب تک کی تمام تحقیقات، حقائق اور معلومات سے آگاہ کیا۔
تفصیل اس لنک سے،
https://www.politico.com/story/2019/06/19/warner-classified-briefing-ufos-1544273

مذید معلومات کے لئے نیچے دیئے گئے لنکس وزٹ کریں۔
https://www.washingtonpost.com/world/national-security/navy-no-release-of-ufo-information-to-the-general-public-expected/2019/05/01/25ef6426-6b82-11e9-9d56-1c0cf2c7ac04_story.html?noredirect=on

https://www.washingtonpost.com/national-security/2019/04/24/how-angry-pilots-got-navy-stop-dismissing-ufo-sightings/?tid=a_inl_manual&noredirect=on

https://www.nytimes.com/2017/12/16/us/politics/pentagon-program-ufo-harry-reid.html

-----------------------------------------------

Post a Comment

Please don't enter any spam link in the comment box. Thanks.

Previous Post Next Post