Alcatel Pixi   Price Data

Alcatel Pixi   Price Data

Alcatel Pixi   Price Data

ادرک: Ginger Facts

    اردو میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں
 

 

Ginger, turmeric niece and cardamom aunt. Yes! They belong to the same family. And the scientific name of his family is Zingiberaceae.

Ginger is a tropical Areas herb that originated in Southeast Asian countries (Indonesia, Malaysia, Thailand, Vietnam and their environs) and then from China and China to the Mediterranean countries (France, Spain, Turkey etc.) When the Romans ruled in Europe, this plant was highly respected and used well, but as the Roman era came to an end, so did ginger. Then it fell into the hands of the Arabs and became very expensive. You can imagine that half a kilo of ginger was worth a goat in the 13th / 14th century!

India is the number one country in ginger production in the world, followed by China and Pakistan at number 34

Ginger is also known to make it slightly digestible by eliminating badness from food. It contains chemical substances that activate the Slivary Glands as soon as they come in contact with our tongue. The saliva softens the food and prepares it for digestion, so the benefits of this herb begin as soon as it enters the mouth. Read more:

۰ It contains a chemical called Gingerol which has properties similar to the chemical Piperine found in pepper. (Read the pepper post)

This chemical has anti-inflammatory and anti-oxidant properties.

Tory and anti-oxidant properties:

That is, it reduces the swelling of the knees and joints, lowers the cholesterol in the blood vessels and opens them so that the blood flows. It strengthens the heart, lowers high blood sugar, reduces obesity, protects against depression and amnesia, as well as controls the free radical molecules in the body that cause cancer.

* Some people, especially pregnant women, have morning sickness when they wake up in the morning and some people travel by air and sea, especially by car in which vomiting begins (Motion Sickness). To prevent this, chew ginger coffee or a small piece of it. Both problems will go away.

* Ginger is also useful for muscle pain in the body. Most of the time we feel pain in our body even if we have spent the whole day. For this, chew ginger coffee or a piece or apply ginger oil directly on the painful area. Will feel comfortable However, avoid excessive use. Always remember to use a small amount of herbal treatment formula first and leave the body for a few hours and then use more if appropriate.

* Obesity (obesity) which makes a person suffer from various diseases like diabetes, heart diseases, various cancers, ginger is a great breaker. Make coffee and drink it and use it in food then see how it helps you lose weight. However, minimize the use of ginger in the diet of lean children. Because it will shrink them further.

* Ginger is good for gastrointestinal digestion. But too much of it during the day can also cause heartburn. Do not take it on an empty stomach.

* Ginger is a very good anti-bacterial and pain reliever. It is also useful for toothache. Place a piece of it under the visible tooth and then see the effect. It is also good to chew for bad breath.

* Ginger is anti-inflammatory and is also good for dry cough and body aches. Drink its coffee and then see the effect.

However, excessive use of ginger is harmful, especially pregnant women when they are in the last stages. Avoid eating ginger. It can cause miscarriage. Similarly, heart patients, especially those who are taking blood thinner medicine. Do not use ginger as it destroys the effect of heart medicine. It is best to consult a doctor.

How to grow:

* Take fresh ginger from the market, if you want, cut it into pieces and indicate the eye or root area shown in the picture. Leave the pieces for a day or two to fill the cut. Keep a distance of at least one foot between the two pieces as it will spread. Grow in multiple pots or large beds if needed.

* Will grow well in open pots. Take a normal-sized wide-mouthed pot with a hole at the bottom for draining excess water, as it will deteriorate in stagnant water.

* Mix half-dry soil and half fertilizer soil which will be obtained from the nursery in it and fill it. Now press the piece one inch down and cover it with soil and water it well from time to time and water it from time to time as it is a plant of hot rain area so do not let its soil dry out at all nor so much water. Let the water stand. In both cases, the plant does not grow.

In a few days, the plant will lift its head and in two months the rhizome is ready. The rhizome is actually the most part of the plant that forms vertically inside the soil. It is not the root but the roots in front of it. Ginger is not the root, it is the rhizome.

* By the way, it can be grown any time of the year, but it is better to grow in early April.

Ginger powder or spices can also be used as needed. Dry the ginger pieces in the sun and dry them and grind them clean. Now put this powder in the can and use as required.

Of course, careful use of ginger is good for health is happiness.


ادرک: Ginger
ادرک, ہلدی کی بھتیجی اور الائیچی کی خالہ ہے۔😁 جی بالکل! یہ ایک ہی خاندان کی سانجھیاں ہیں۔ اور ان کے خاندان کا سائینسی نام Zingiberaceae ہے.
جنجر Tropical Areas کی جڑی بوٹی ہے جس کا آغاز جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک( انڈونیشیا، ملایشیا، تھائی لینڈ، ویتنام اور ان کے اردگرد ممالک) سے ہوا پھر وہاں سے چین اور چین سے بحیرہ روم کے اردگرد کے ممالک (فرانس، اسپین ، ترکی وغیرہ)۔ جب یورپ میں رومیوں کی حکومت تھی تو اس پودے کو بڑی عزت دی گئی اور خوب استعمال کیا جاتا رہا لیکن جیسے ہی رومیوں کا دور ختم ہوا ادرک بھی ختم ہوگئی۔ پھر یہ عربوں کے ہاتھ چڑھی اور انتہائی مہنگی ہوگئی۔ آپ اس بات کا ایسے اندازہ کرسکتے ہیں کہ 13/14 صدی میں آدھا کلو ادرک کی قیمت ایک بکرے کے برابر تھی!
دنیا میں ادرک کی پیداوار میں نمبر ون ملک بھارت ہے اس کے بعد چین آتا ہے جبکہ پاکستان کا 34 نمبر ہے😔۔
ادرک کے بارے میں مشہور ہے کہ یہ خوراک سے بادی پن ختم کرکے اسے ہلکا قابل ہضم بناتی ہے۔ اس میں ایسے کیمیائی اجزا ہوتے ہیں جو ہماری زبان کے ساتھ لگتے ہی خوب تھوک پیدا کرتے( it activates Slivary Glands) ہیں۔ تھوک خوراک کو نرم کرکے اسے ہاضمے کے لئیے تیار کرتا ہے چنانچہ منہ میں داخل ہوتے ہی اس جڑی کے فائدے شروع ہوجاتے ہیں۔ مذید پڑھئیے:
۰ اس میں Gingerol نامی کیمیکل پایا جاتا ہے جو کہ کالی مرچ میں پائے جانے والے کیمیکل Piperine سے ملتی جلتی خصوصیات کا حامل ہے۔ (پڑھئے کالی مرچ والی پوسٹ)
یہ کیمیکل Anti- inflammatory اور Anti- oxidant خوبی رکھتا ہے۔
اینٹی انفلے مے ٹوری اور اینٹی آکسی ڈینٹ خوبی:
یہ ہے کہ یہ گھٹنوں اور جوڑوں کی سوجن کم کرتی ہے، خون کی نالیوں سے کولیسٹرول کم کرکے ان کو کھولتی ہے تاکہ خون رواں دواں ہو۔ اس طرح دل کو مضبوط کرتی ہے، ہائی شوگر کو کم کرتی ہے، موٹاپا کم کرتی ہے، ڈیپریشن اور بھولنے کی بیماری سے بچانے کے ساتھ ساتھ جسم میں موجود Free Radical مالیکیولز جو کینسر بناتے ہیں ان کو بھی کنٹرول کرتی ہے۔
۰ کچھ لوگوں کو خصوصاً حاملہ خواتین کو صبح اٹھتے وقت قے آتی(Morning Sickness) ہے اور کچھ لوگوں کو ہوائی و بحری سفر کرتے خصوصاً گاڑی کا سفر جس میں قے آنا شروع (Motion Sickness) ہوجاتی ہے۔ اس سے بچائو کے لئیے ادرک کا قہوہ یا اس کا چھوٹا سا ٹکڑا چبائیں ۔ دونوں تکالیف دور ہوجائیں گی۔
۰ ادرک جسم میں پٹھوں کے درد کے لئیے بھی مفید ثابت ہوئی ہے۔ اکثر اوقات ہمیں جسم میں درد محسوس ہوتا ہے چاہے سارا دن ویلہ گزارا ہو 😃۔ اس کے لئیے ادرک کا قہوہ یا ٹکڑا چبائیں یا ادرک کا تیل سیدھا درد والی جگہ پر لگائیں ۔ آرام محسوس کریں گے۔ تاہم بہت زیادہ استعمال سے گریز کریں۔ جڑی بوٹیوں کے علاج کا فارمولا ہمیشہ یاد رکھیں کہ کوئی بھی چیز ہلکی مقدار میں پہلے استعمال کریں اور کچھ گھنٹے جسم کو ایسے ہی چھوڑ دیں اگر موافق آئے تو مزید استعمال کریں۔
۰موٹاپا (obesity) جو انسان کو طرح طرح کی بیماریوں جیسے شوگر، دل کی بیماریاں، مختلف کینسرز مں مبتلا کردیتا ہے، ادرک اس کا زبردست توڑ ہے۔ اس کا قہوہ بنا کر پئیں اور خوراک میں استعمال کریں پھر دیکھیں یہ آپ کا وزن کیسے گھٹاتی ہے۔ تاہم دبلے پتلے بچوں کے کھانے میں ادرک کا استعمال کم سے کم کریں۔ کیونکہ یہ ان کو مذید سکڑو کرے گی😝.
۰ ادرک معدے کے ہاضمے کے لئیے اچھی ہے۔ لیکن دن میں اس کا بہت زیادہ استعمال معدے میں جلن کا باعث بھی بن سکتا ہے۔ اسے خالی پیٹ مت لیں۔
۰ ادرک ایک بہت اچھی Anti Bacterial (جراثیم کش) اور pain reliever (درد سے بچائو) ہے۔ یہ دانتوں کے درد کے لئیے بھی مفید ہے۔ اس کا ایک ٹکڑا دکھتے دانت کے نیچے رکھیں اور پھر اثر دیکھیں۔ اس کے ساتھ ساتھ منہ کی بدبو کے لئیے بھی اس کا چبانا اچھا۔
۰ ادرک Anti- inflammatory ہونے کی وجہ سے خشک کھانسی اور جسم درد کے لئیے بھی اچھی ہے۔ اس کا قہوہ پئیں اور پھر اثر دیکھیں۔
تاہم ادرک کا زیادہ استعمال نقصان دہ ہے خصوصاً حاملہ خواتین جب وہ آخری مراحل میں ہوں ادرک کھانے سے گریز کریں یہ بچہ Miscarriage کا سبب بن سکتی ہے۔ اسی طرح دل کے مریض خصوصاً وہ جو Blood Thinner دوائی لے رہے ہوں۔ ادرک کا استعمال نہ کریں کیونکہ یہ دل کی دوائیوں کا اثر زائیل کردیتی ہے۔ بہتر یہ ہے کہ ڈاکٹر سے مشورہ کرلیں۔
اگانے کا طریقہ:
۰ بازار سے تازہ ادرک لیں اس کے چاہیں تو ٹکڑے کاٹ لیں اور تصویر میں دکھائی گئی آنکھ یا جڑ والی جگہ کی نشاندہی کرلیں۔ ان ٹکڑوں کو ایک دو دن ایسے ہی رہنے دیں تاکہ کاٹا گیا حصہ بھر جائے۔دو ٹکڑوں کے درمیان کم از کم ایک فٹ کا فاصلہ رکھیں کیونکہ یہ اگ کر پھیلے گا۔ اگر ضرورت پڑے تو ایک سے زیادہ گملے یا بڑی کیاری میں اگائیں۔
۰ کھلے گملوں میں اچھی اگے گی۔ ایک نارمل سائز کا چوڑے منہ والا گملا لیں جس کے نیچے زائد پانی نکالنے والا سوراخ ہو کیونکہ ٹھرے پانی میں یہ خراب ہوجائے گی۔
۰ اس میں آدھی سوکھی مٹی اور آدھی فرٹیلائیزر مٹی جو نرسری سے مل جائے گی، مکس کرکے ڈال کر بھر لیں ۔ اب اس کے ٹکڑے کو ایک انچ نیچے دبا کر اوپر مٹی سے بند کرکے اچھی طرح پانی دے دیں اور وقتاً فوقتاً اسے پانی دیتے رہیں چونکہ یہ گرم بارشوں والے علاقے کا پودا ہے اس لئیے اسکی مٹی کو بالکل خشک نہ ہونے دیں نہ ہی اتنا پانی دیں کہ پانی کھڑا ہوجائے۔ دونوں صورتوں میں پودا نہیں اگتا۔
کچھ ہی دنوں میں پودا سر اٹھا لے گا اور دو ماہ میں Rhizome تیار ہوجاتا ہے۔ Rhizome یا جذر پودے کا اصل میں تنا نمہ حصہ ہے جو مٹی کے اندر چوڑائی میں (Vertically) بنتا ہے۔ یہ جڑ نہیں ہوتا بلکہ اس کے آگے جڑیں بنتی ہیں۔ ادرک جڑ نہیں ہے Rhizome ہے۔
۰ ویسے تو یہ سال میں کسی بھی وقت اگایا جاسکتا ہے لیکن بہتر یہی ہے کہ اپریل کے شروع میں اگائیں۔
ادرک کا پائوڈر یا مصالحہ بنا کر بھی حسب ضرورت استعمال میں لایا جاسکتا ہے۔ ادرک کے ٹکڑے دھوپ میں خشک کرکے سکھا لیں اور ان کو پیس کر صاف کرلیں۔ اب اس پائوڈر کو ڈبے میں ڈال لیں اور حسب ضرورت استعمال کریں۔
بیشک ادرک کا محتاط استعمال صحت کے لئیے فائدہ مند ہے۔

Post a Comment

Previous Post Next Post