The fruit that eats your flesh! وہ پھل جو آپ کا گوشت کھاتا ہے

 (Pine apple)The fruit that eats your flesh! وہ پھل جو آپ کا گوشت کھاتا ہے!

 

A family of plants is Bromeliads, which have long grass-like leaves and flowers. This is a family of continental South America and there are about 3600 species of this family. Most are used as ornamental plants but only a few are used as fruits and one of them is pineapple.


 




Pineapple was first seen on the banks of the Paraguay River in the South American country of Paraguay. From there, the locals popularized it and it began to be cultivated throughout the continent, and from there it spread to nearby North America. When Columbus discovered the Americas in the late 1500's, he was the first European to taste the fruit. From here he took the gift back to Europe and there was talk of the fruit. In 1550, Portuguese merchants brought it from Europe to Raja Maharajas in India and thus the fruit became popular in Hindu Pak.

 

Pineapple is actually its scientific name. Its full scientific name is ananas comosus. The name is actually derived from the Tupi language, which was first spoken by tribal people in South America. The word pineapple means pine.

 

Because it was shaped like a pine and was so sweet, whites named it Pine apple. It is the fruit of the tropical region, so its largest producers are Costa Rica, Brazil, the Philippines and Indonesia. Remember tropics are areas where the weather is warm and humid all year round with good rainfall.

 

This fruit actually grows on a shrub-like plant and many of its small flowers grow in one place. About one hundred to two hundred flowers grow and all these flowers turn into a single fruit in one place, ie pineapple is not a single fruit but a collection of many small fruits. That's why there are so many cuts on its outer skin. Let's see what are the benefits of this fruit:

 

* Pineapple contains 86% water and a large amount of potassium. Which are the best to meet the water shortage. Potassium acts as an electrolyte in the body and is also good for heart health.

 

* It contains a very large amount of vitamin C which improves the immune system in the body.

 

* It is very low in fat and very low in calories. That is why it is a thing that is easily digested. 

 

* It contains two types of antioxidants, flavonoids and phenolic acid. Many fruits contain antioxidants. They protect the body from cancer, cleanse the blood, beautify the skin, beautify the nails and hair, and open the arteries of the heart. Removes acne scars etc.

 

* Pineapple contains a special type of chemical (enzyme) called bromelain. If you have eaten pineapple, you will notice that your tongue and the inside of your mouth feel lighter. In fact, pineapple digests the Bromelain protein. God has placed this quality in this fruit so that if it is attacked by germs, it will eat them. Therefore, it is also a very good fruit for stomach worms. Our fingerprints are left where our fingers touch. They are actually made from oils and dead cells from our skin. But surprisingly, the fingerprints of those who work in the pineapple fields do not remain on anything because bromelain is present throughout the plant and it eats away the dead cells of the fingerprints. Due to its protein-digesting properties, pineapple is cooked with meat in many countries to make it digestible. That is, a few pieces of pineapple with meat will digest it in your stomach in the best way.

 

* Pineapple is a natural pain killer. The same bromelain in it has anti-inflammatory properties and has also been tested for joint pain.

 

It has also been used as a cleaning agent. It is the fruit of long boat trips. And the wood of the boats has been washed best by mixing its juice in the sand.

 




How to grow pineapple?

 

Since pineapple is a tropical fruit, growing it is a bit of a chore. Peel a squash, grate it and take it off. Leave it for a few days. In a large pot, mix sand and compost. Make holes in the bottom of the pot so that the water does not stand too much. Put the pineapple crown in it. Before applying, take off the lower leaves of the crown so that it looks fine and becomes the root. Keep it in a shady place in the sun and don't let the soil dry out. I can't stand the cold, I have to keep it inside in the winter. The plant will bear fruit in about two years. Can be grown on a large scale in greenhouses. It is mostly grown by Crowning and the seeds are tested only for Breeding. Since the seed degrades the quality of the fruit, pineapple fields are protected from pollination. Its largest pollinator is the Humming Bird. Once upon a time, the American island of Hawaii supplied this fruit to the whole world and it was forbidden to bring Humming Bird there.

 

Almost all pineapple and its family plants have their leaves starting from a central stem and spreading like a crown all around, causing rainwater to accumulate in their corners or bottoms. Nature has endowed many of the world's smallest animals with this trait. Salamander and Tree Frogs that c Nubians are a special animal of America. Their beautiful species are found only in these waters.

 

Whether you keep pineapple at home as an ornamental plant or for fruit. But it's worth seeing and eating!





انناس : Pine apple

وہ پھل جو آپ کا گوشت کھاتا ہے!

پودوں کا ایک خاندان ہے Bromeliads جس میں گھاس کی طرح لمبے پتے اور پھول بنتے ہیں۔ یہ براعظم جنوبی امریکہ کا خاندان ہے اور اس خاندان کی کوئی 3600 قسمیں ہیں۔زیادہ تر سجاوٹی پودے کے طور پر استعمال ہوتی ہیں لیکن ان میں چند ایک ہی ہیں جو پھل کے طور پر استعمال ہوتے ہیں اور ان میں سے ایک ہے انناس۔

انناس جنوبی امریکہ کے ملک پیراگوئے کے دریا, دریائے پیراگوئے کے کنارے پہلی بار نظر آیا تھا۔ وہاں سے مقامی لوگوں نے اس کو مشہور کیا اور اسکی پورے براعظم میں کاشت ہونے لگی بلکہ یہیں سے قریبی براعظم شمالی امریکہ میں بھی شہرت پہنچ گئی۔ 1500 عیسوی کے آخر میں کولمبس براعظم امریکہ دریافت کرتے وقت جب یہاں پہنچا تو پہلا یورپی تھا جس نے یہ پھل چکھا۔ یہاں سے وہ یہ سوغات واپس یورپ لے کر گیا اور وہاں اس پھل کے چرچے ہوگئے۔ یورپ سے 1550 میں پرتگیزی تاجر اسے انڈیا میں راجہ مہاراجوں کے پاس لے کر آئے اور اس طرح ہندو پاک میں یہ پھل مقبول ہوا۔

انناس دراصل اس کا سائینسی نام ہے۔ اسکا پورا سائینسی نام ananas comosus ہے۔ یہ نام دراصل Tupi زبان کی مرہون منت ہے جو جنوبی امریکہ میں قبائیلی لوگ پہلے وقتوں میں بولا کرتے تھے۔ لفظ انناس کا مطلب ہے ؛چیڑ (pine)

چونکہ اسکی شکل Pine کی طرح تھی اور انتہائی میٹھا تھا، گوروں نے اس کا نام Pine apple دے دیا۔ یہ ٹراپیکل علاقے کا پھل ہے اس لئیے اسکے سب سے بڑے پیداواری ملک Costa Rica, برازیل، فلپائین اور ان ڈونیشیا ہیں۔ یاد رکھیں ٹراپیکل وہ علاقے ہوتے ہیں جہاں سارا سال موسم گرم اور نمدار رہے بارشیں خوب ہوتی ہوں،

یہ پھل دراصل ایک جھاڑی نما پودے پر لگتا ہے اور اسکے بہت سارے چھوٹے موٹے پھول ایک ہی جگہ پر اگتے ہیں۔ تقریباً ایک سو سے دو سو تک پھول اگتے ہیں اور یہ تمام پھول ایک ہی جگہ پر اکھٹے پھل میں تبدیل ہوجاتے ہیں یعنی انناس ایک پھل نہیں ہوتا بلکے بہت سارے چھوٹے چھوٹے پھلوں کا مجموعہ ہوتا ہے۔ اسی لئیے اسکی بیرونی جلد پہ بہت سارے کٹ نظر آتے ہیں۔ اس پھل کے کیا کیا فائدے ہیں آئیے دیکھتے ہیں:

۰ پائن ایپل میں 86% پانی ہوتا ہے اسکے علاوہ پوٹاشییم بڑی مقدار میں موجود ہے۔ جو کہ پانی کی کمی کو پورا کرنے لئیے بہترین ہیں۔ پوٹاشئیم جسم میں بطور الیکٹرلائیٹ کام کرتا ہے اور دل کی صحت کے لئیے بھی اچھا ہے۔

۰ اس میں بہت بھاری مقدار میں وٹامن سی موجود ہے جو جسم میں قوت مدافعت کو بہتر کرتا ہے.

۰ اس میں Fat انتہائی کم ہوتا ہے اور کیلوریز بھی انتہائی کم۔ اس لئیے جلدی ہضم ہونے والی شے ہے۔ 

۰ اس میں flavonoids اور phenolic acid دو قسم کے antioxidants موجود ہیں۔ اینٹی آکسیڈینٹس بہت سارے پھلوں میں ہوتے ہیں۔ یہ جسم کو کینسر سے بچاتے ہیں، خون صاف کرتے ہیں، جلد خوبصورت، ناخن بال خوبصورت، دل کی شریانیں کھولتے ہیں۔ منہ کے داغ دھبے ایکنی وغیرہ دور کرتے ہیں۔

۰ انناس میں ایک خاص قسم کا کیمیکل(enzyme) پایا جاتا ہے جسے bromelain کہتے ہیں۔ آپ نے اگر انناس کھایا ہو تو محسوس کریں گے اسکے بعد آپ کی زبان اور منہ کا اندر کا حصہ ہلکا ہلکا سا محسوس ہوتا ہے۔ دراصل انناس میں موجود یہ Bromelain پروٹین کو ہضم کرتا ہے۔ خدا نے اس پھل میں یہ خاصیت اسلئیے رکھی ہے کہ اگر اس پر جراثیم حملہ کریں تو یہ ان کو کھا ڈالے۔ اس لئیے یہ پیٹ کے کیڑوں کے لئیے بھی بہت اچھا پھل ہے۔ ہماری انگلیاں جہاں لگتی ہیں وہاں ہمارے فنگر پرنٹس رہ جاتے ہیں۔ یہ دراصل ہمارے جسم کی کھال سے نکلنے والے تیل اور مردہ سیلز سے پرنٹس بنتے ہیں۔ لیکن حیرت انگیز طور پر جو لوگ انناس کے کھیتوں میں کام کرتے ہیں ان کے فنگر پرنٹس کسی چیز پر باقی نہیں رہتے کیونکہ bromelain پورے پودے میں موجود ہے اور یہ فنگر پرنٹس کے مردہ سیلز کھا کر اس کے نشان مٹا دیتا ہے۔ پروٹین کو ہضم کرنے والی خاصیت کی وجہ سے بہت سارے ممالک میں انناس گوشت کے ساتھ پکتا ہے تاکہ اسے قابل ہضم بنادے۔ یعنی گوشت کے ساتھ انناس کے چند ٹکڑے اسے آپ کے پیٹ میں بہترین طریقے سے ہضم کریں گے۔

۰انناس ایک قدرتی درد کی دوا Pain Killer ہے۔ اس میں موجود یہی bromelain درد کش خاصیت anti-inflammatory بھی رکھتا ہے اور جوڑوں کے درد کے لئیے بھی آزمودہ ہے۔

۰ اس کو صفائی کے ایجنٹ کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا رہا ہے۔ یہ کشتیوں کے لمبے سفروں کا خاص پھل ہے۔ اور اس کے رس کو ریت میں ملا کر کشتیوں کی لکڑی کو بہترین دھویا جاتا رہا ہے۔

انناس کو کیسے اگایا جائے؟

انناس چونکہ ٹراپیکل علاقے کا پھل ہے اس لئیے اسکو اگانا تھوڑا محنت طلب کام ہے۔ انناس کے اوپر جو اس کا تاج ہوتا ہے اسے گول مول مروڑ کر اتار لیں اور کچھ دن ایسے ہی رکھ دیں۔ ایک بڑے گملے میں ریت اور کمپوسٹ سے مکس مٹی ڈالیں گملے کے نیچے سوراخ ہوں تاکہ پانی زیادہ کھڑا نہ رہے۔ اس میں انناس کے تاج کو لگادیں ۔لگانے سے پہلے تاج کے نچلے تھوڑے سے پتے اتار لیں تاکہ ٹھیک طرح لگے اور جڑ بنے۔ اسے دھوپ میں چھائوں والی جگہ پر رکھیں اور مٹی کو خشک نہ ہونے دیں۔ سردی نہیں برداشت کرسکتا سردیوں میں اندر رکھنا پڑے گا۔ دو سال میں تقریباً پودا پھل بنائے گا۔ بڑے پیمانے پر گرین ہائوس کے زریعے اگایا جاسکتا ہے۔ اسے زیادہ تر Crowning کے زریعے ہی اگایا جاتا ہے اور بیج صرف Breeding یعنی نئی نسلوں کی پیداوار کے لئیے آزمائے جاتے ہیں۔ بیج چونکہ پھل کی کوالٹی خراب کرتا ہے اس لئیے انناس والے کھیتوں کی پولینیشن ہونے سے بچایا جاتا ہے۔ اس کا سب سے بڑا Pollinator , Humming Bird ہے۔ کسی زمانے میں امریکہ کا جزیرہ ہوائی ساری دنیا کو یہ پھل مہیا کرتا تھا اور وہاں Humming Bird لانے پر پابندی تھی۔

انناس اور اس کے خاندان کے تقریباً تمام پودے ان کے پتے ایک مرکزی تنے سے شروع ہوکر چاروں طرف ایک crown کی طرح پھیلتے ہیں جسکی وجہ سے ان کے کونوں یا پیندوں میں بارش کا پانی جمع ہوجاتا ہے۔ قدرت نے ان میں یہ خاصیت رکھ کے دراصل دنیا کے بہت سارے ننھے جانوروں کو گھر دیا ہے۔ Salamander اور Tree Frogs جو کہ جنوبی امریکہ کے خاص جانور ہیں انکی خوبصورت قسمیں صرف انہی پانیوں میں پائی جاتی ہیں۔

انناس کو چاہے ایک سجاوٹی پودے کے طور پر گھر میں رکھیں یا پھل کے حصول کے لئیے۔ لیکن ہے یہ دیکھنے اور کھانے لائق!

 


Post a Comment

Please don't enter any spam link in the comment box. Thanks.

Previous Post Next Post