بچوں کی فرسٹریشن اور تربیت کا تیسرا مرحلہ The 3rd phase of children's frustration and training

    اردو میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں
 


بچوں کی فرسٹریشن اور تربیت کا تیسرا مرحلہ
مقابلہ
والدین جو سب سے بڑی غلطی کرتے ہیں ۔ بچوں کا آپس میں مقابلہ کروانا ۔۔ کوئی بچہ تھیوریٹیکل مائنڈ کا ہے کوئی پریکٹیکل . کسی کی کمیونیکیشن اچھی ہے کسی کی باڈی لینگویج ۔ ہر بچے کی عادات ، ذہانت اور مہارت مختلف ہیں تو آپ تمام مختلف بچوں کا مقابلہ ایک ہی فیلڈ میں کیسے کروا سکتے ہیں ؟ یہاں آپ کا بچہ احساس کمتری کا شکار بھی ہو سکتا ہے . یاد رکھیں کہ مقابلہ بعد میں پہلے مقابلے کی تیاری کروائی جاتی ہے ۔ ایک اور کام کہ انعام کی صورت میں بچوں کو پیسے دینے سے گریز کیا کریں . تحائف کی صورت میں ان کی ضرورت یا پسند کی اشیاء دے دیا کریں بجائے پیسوں کے ۔۔۔و
انٹرنیٹ ۔
آپ بچوں کو ایک کامن موبائل ، کمپیوٹر یا لیپ ٹاپ دیں ۔ پرسنل سے گریز کریں . انٹرنیٹ کی رسائی مت دیں ۔ جو مواد بچے کو ضرورت ہے اسے ڈاون لوڈ کر دیں ۔ پاس ورڈ اپنے ہاتھ میں رکھیں ۔ ایک وقت مقرر کریں اور اسی وقت میں ان چیزوں کے استعمال کو حتمی بنائیں ۔ چیک اینڈ بیلنس ضرور رکھیں ۔ س
گڈ اینڈ بیڈ ٹچ
موجودہ حالات کے مطابق اپنے بیٹے اور بیٹی کو گڈ اینڈ بیڈ ٹچ کا علم ضرور دیں ۔ زیادہ تفصیل بچے کو گمراہ کر سکتی ہے یا خوف میں مبتلا ۔ آپ سنسنی سا بتائیں کہ کن پارٹس کو ٹچ کرنا گڈ ٹچ اور کن کو ٹچ کرنا بیڈ ٹچ کہلاتا ہے ۔ اتنا بتائیں کہ کسی اور کے پرائیویٹ پارٹس کو ٹچ نہیں کرنا اور کسی دوسرے کو یہ اجازت نہیں دینی کہ وہ آپ کے پرائیویٹ پارٹس کو ٹچ کرے . کوئی ایسا کرے تو ہمیں ضرور بتانا ہے ۔۔یہ
غذا
بچوں کی غذا پر خصوصی توجہ دیں ۔ یہ پاپڑ ، جیلی۔ چورن، فاسٹ فوڈز۔۔ یہ سب آپ کے بچوں کو وقت سے پہلے بالغ بھی کر رہے ہیں اور بے چین بھی ۔ بچپن سے ان چیزوں پر توجہ دیں . ایک اور بات کہ حرام کا نوالا کھلا کر بچوں سے اچھے کی امید رکھنا آپ کی نادانی ہے ۔ حلال میں اتنی طاقت ہے کہ وہ گھر میں نیک اور اچھے انسان پیدا کرتا ہے اور حرام آپ کے گھر میں غنڈے، دہشت گرد ، ریپسٹ اور چور ہی پیدا کرتا ہے ۔ حرام انسان میں سے غیرت ختم کر دیتا ہے ۔۔۔م
حوصلہ افزائی کی طاقت
اپنے بچوں کی حوصلہ افزائی کیا کریں بجائے تنقیدی جملوں کا استعمال کرنے کے ، آپ کو اندازہ ہی نہیں کہ آپ کے چھوٹے چھوٹے جملے آپ کے بچوں کی خود اعتمادی کا بے رحمی سے قتل کرتے ہیں ۔
ہم نے ایک مرتبہ presentation skills کے مقابلے کا انعقاد کیا ۔ ایک کمرے میں بچے اس مقابلے کی تیاری کرنے میں مصروف تھے ۔ میں اپنے آفس سے نکلا تو مجھے اس کمرے سے ایک بچے کی آواز آئی جو توتلا تھا ۔ وہ بچہ وائٹ بورڈ پر لکھتے ہوئے کچھ بول رہا تھا اور باقی بچے اس کا مذاق بنا رہے تھے ۔ میں نے ونڈو کے ساتھ ٹھہر کر کچھ دیر توجہ دی اور پھر کمرے میں داخل ہو گیا . مجھے دیکھ کر تمام بچے خاموش ہو گئے ۔ میں دروازے سے تالیاں بجاتا ہوا اس بچے تک پہنچا جہاں وہ وائٹ بورڈ کے ساتھ ٹھہرا تھا ۔ اس بچے کی جا کر حاصل افزائی کی .
یار کیا خوب انداز ہے آپ کا ۔
کتنی گرج دار آواز ہے ۔
آپ کی باڈی لینگویج نے تو مجھے حیران ہی کر دیا ۔
یہ بچہ بہت خوش ہوا ۔۔
آپ نے مقابلے میں حصہ لیا ہے ؟  
نہیں سر ۔۔
نام لکھیں بھئی اس بچے کا ۔۔
لیکن سر ؟
لیکن ویکن کچھ نہیں ۔۔
میرے آفس میں آئیں آپ ۔۔
اس بچے کو کچھ دیر موٹیویٹ کیا اور تین دن تک ایک کمرے میں اس بچے کی تیاری کرواتا رہا . اس کی غلطی پر رائے بھی دیتا رہا اور حوصلہ افزائی بھی کرتا رہا .۔۔۔۔۔۔۔0
جس دن مقابلہ ہوا یہ دن بہت اہم تھا ۔ میں ہیڈ جج تھا ۔ اس بچے کی جب باری آئی تو ہر تیسرے جملے پر میں کھڑا ہو کر تالیاں بجاتا تو میرے ساتھ ساتھ باقی سٹاف بھی کھڑا ہو جاتا اور طلباء بھی ۔۔ اس دن اس بچے نے خدا جانے کہاں کہاں سے بہترین جملے تلاش کر کے بولے تھے ۔ اس مقابلے میں یہی توتلا بچہ دوسری پوزیشن لے گیا اور سب حیران تھے ۔۔
شاہد بھائی میرے بہترین دوست ہیں . ان کا بیٹا عثمان ساتویں جماعت میں ہے ۔ شاہد بھائی نے دو تین مرتبہ اسے پڑھانے کی بات کی تو میں نظر انداز کر گیا کہ چھوٹی کلاس ہے ابھی ۔ انہوں نے ایک دن اسرار کیا ۔ بہت پریشان تھے ۔ عثمان مسلسل بول نہیں پاتا تھا ۔ رک رک کر ، اٹک اٹک کر بات کرتا ۔ خیر اس پریشانی کو دیکھ کر میں نے حامی بھر لی اور تین دن پہلے عثمان کو وقت دینا شروع کیا ۔۔
پہلے دن ہی کچھ جملوں کا استعمال کیا ۔ عثمان کو بولنے کا موقع دیتا رہا . وہ جہاں رکتا ۔ اس کی حوصلہ افزائی ۔
واہ یار کیا بات ہے . زبردست ۔ ایکسیلنٹ۔۔ گریٹ۔۔
یہ بچہ کہنے لگا " سر جب بولتا ہوں تو دوست یا فیلوز میرا مذاق بناتے ہیں " ۔
عثمان بیٹا یاد رکھنا یہ دنیا اسی کا مذاق بناتی ہے جس کا مقابلہ نہیں کر سکتی . لوگ آپ کو آگے بڑھنے سے روکتے ہیں ۔
بس یہ بچہ شروع ہو گیا ۔۔ تیسرے دن میں نے کہا آپ نے اب کیمرے کے سامنے بولنا ہے ۔
نہیں سر پلیز ۔۔ یا تو آپ مجھے نہ بتاتے کہ آپ میری ویڈیو بنا رہے ہیں ۔۔
" نہیں عثمان ۔۔ یہی خوف اور ڈر تو ختم کرنا ہے ۔ کل کو آپ سٹیج پر تقریر کریں گے تو کس کس کو ویڈیو بنانے سے روکیں گے ؟
ہاں سر ۔۔ یہ بات تو ہے ۔۔
بس پھر ۔۔ اس بچے نے ہمت باندھ لی ۔۔
اس کی کچھ ویڈیوز اور ریکارڈنگ اس کے بابا شاہد بھائی کو سینڈ کی ۔. عثمان کے والد یعنی شاہد بھائی اور اس کی والدہ دونوں خوشی سے رو پڑے ۔ جو بچہ اپنے والدین سے بات کرتے اٹک جاتا وہ تین دن میں ہی کیمرے کے سامنے تھا ۔۔۔
میں نے اس بچے کو صرف دو چیزیں دی ۔۔
حوصلہ افزائی کی طاقت ۔۔
سننے والے کان اور توجہ ۔۔
باقی اللہ کرم کرتا گیا ۔۔۔
یہ دو کیس آپ کو سمجھانے کیلئے بیان کئے کہ حوصلہ افزائی بچوں کو کہاں سے کہاں لے جاتی ہے ۔
دسترخوان پر تربیت
بچوں کی تربیت کیلئے ایک اہم پہلو اور طریقہ آپ کے گھر کا دستر خوان ہے . کل شاہد بھائی اور آصف بھائی سے بچوں کی تربیت اور نفسیات پر گفتگو ہوئی تو میں نے مشورہ دیا کہ اپنے گھر میں دسترخوان کا اہتمام لازم کریں ۔ شاہد بھائی کہنے لگے کہ ہم ایسا ہی کرتے ہیں تو میں نے جواب دیا کہ میں اس دسترخوان کی بات نہیں کر رہا جو ہمارے گھروں میں عام طور پر لگایا جاتا ہے ۔۔۔۔۔۔۔
دسترخوان لگنے پر ہمارے گھروں میں عجیب سی گفتگو ہوتی ہے ۔ آج یہ ہو گیا ۔ آج وہ ہو گیا . آج فلاں کی بیٹی یا فلاں کے بیٹے نے ۔۔۔مطلب ایک لا حاصل گفتگو ہمارے دسترخوان پر ہوتی ہیں ۔ جس کا بچوں کا فائدہ تو کوئی نہیں البتہ نقصان بہت ہوتے ہیں ۔۔۔
دسترخوان لگانے سے پہلے میاں بیوی مل کر ایک موضوع کا انتخاب کریں ۔ اس موضوع پر گفتگو کا آغاز کیا جائے اور آغاز بھی میاں بیوی ہی کریں ۔ اس دوران آپ کے بچے خود بخود ہی اس مکالمے یا گفتگو کا حصہ بن جائیں گے اور سیکھنے کا عمل شروع ہو جائے گا ۔ ہمارے ساتھ المیہ ہے کہ ہم بچوں کو نصیحت صرف اس وقت کرتے ہیں جب ماحول ناسازگار ہوتا ہے جبکہ بچے کو نصیحت ہمیشہ خوشگوار ماحول میں کرنی چاہئے کیونکہ اس وقت بچہ سننے کے موڈ میں ہوتا ہے ۔ نصیحت پر عمل کرنے کیلئے سننا لازم ہے لیکن آپ نصیحت تب کرتے ہیں جب بچہ غصے میں ہو یا شرارت کر بیٹھا ہو ۔۔۔
یہ ایک چھوٹا سا عمل ہے لیکن اس سے آپ کے بچوں کی کمیونیکیشن اور خود اعتمادی مضبوط ہوتی ہے ۔ اس طرح آپ کا بچہ باہر مجمعے کے سامنے بولنے اور مکالمہ کرنے کے قابل ہو جاتا ہے ۔۔۔
 
نوٹ ۔  آپ لوگ رائے کا اظہار کر کے رہنمائی بھی کر سکتے ہیں ۔

Post a Comment

Please don't enter any spam link in the comment box. Thanks.

Previous Post Next Post